READandSEND
+92-321-5153(594)

Hay Dua Yaad Magar

Share And Care

Hay Dua Yaad Magar

 

ھے دعا یاد مگر حرف دعا یاد نہیں

میرے نغمات کو انداز  نوا یاد نہیں

 

ھم نے جن کے لیے راھوں میں بچھایا تھا لہو

ھم سے کہتے ہیں وہی عھد وفا یاد نہیں

 

زندگی جبر مسلسل کی طرح کاٹی ھے

جانے کس جرم کی پاءی ھے سزا یاد نہیں

 

میں نے پلکوں سے در یار پہ دستک دی ھے

میں وہ ساءل ہوں جسے کوءی صدا یاد نہیں

 

کیسے بھر آءیں سر شام کسی کی آنکھیں

 کیسے تھراءی چراغوں کی ضیاء یاد نہیں

 

صرف دھندلاءے ستاروں کی چمک دیکھی ہے

کب ھوا، کون ھوا مجھ سے جدا ، یاد نہیں

 

آءو اک سجدہ کریں عالم مدھوشی میں

لوگ کہتے ہیں کہ ساحر کو خدا یاد نہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

4 × 5 =